محبت یا سودا

محبت یا سودا
Image from ilogcreations.com

آج اپنے جگری یار فیصل سے ملاقات ہوئی۔ موصوف ایک محترمہ کے عشق میں بری طرح پاگل ہیں اور سمجھتے ہیں کہ وہ نہ ملی تو وہ جی نہیں پائیں گے۔ انکے جھگڑوں کی رودادوں سے تنگ آتے میں اکثر اسے یہ مشورہ دیتا “وہ گھاس نہیں ڈالتی تو چھوڑ دے اسے” اور وہ ہمیشہ یہی کہتا “محبت کی ہے سود ا نہیں” آج اسنے نماذ کے بعد کاونٹر نکال لیا، پوچھنے پر بتایا کہ وہ 41 دفعہ آیات الکرسی کا 40 روزہ وظیفہ کر رہا ہے۔ میں مسکرایا، اٹھا اور کہا ” اللہ محبت کرتا ہے سود ا نہیں” اور گھر چلا دیا۔

Advertisements

4 thoughts on “محبت یا سودا

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s